1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. [IMG]
  3. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

احتسابِ قادیانیت جلدنمبر 14

محمدابوبکرصدیق نے 'احتساب قادیانیت جلد 14' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ فروری 1, 2015

  1. ‏ نومبر 1, 2015 #391
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا’’ضرورت الامام۱۹۲۲ء‘‘193(کذاب نبیوں کو مرزا نے سچا نبی مان لیا)

    ۱۹۳… ’’بائبل میں لکھا ہے کہ ایک مرتبہ چار سو نبی کو شیطانی الہام ہوا تھا اور انہوں نے الہام کے ذریعہ سے جو ایک سفید جن کا کرتب تھا۔ ایک بادشاہ کی فتح کی پیش گوئی کی۔ آخر وہ بادشاہ بڑی ذلت سے اسی لڑائی میں مارا گیا اور بڑی شکست ہوئی اور ایک پیغمبر جس کو حضرت جبرائیل علیہ السلام سے الہام ملا تھا۔ اس نے بھی خبر دی تھی کہ بادشاہ مارا جائے گا اور کتے اس کا گوشت کھائیں گے اور بڑی شکست ہوگی۔ سو یہ خبر سچی نکلی۔ مگر اس چار سو نبی کی پیش گوئی جھوٹی ظاہر ہوئی۔‘‘
    (ضرورت الامام ص۱۷، خزائن ج۱۳ ص۴۸۸)
    ابوعبیدہ: مرزاقادیانی! کیوں دھوکہ دے کر مطلب نکالتے ہو۔ وہ چار سو نبی آپ ہی جیسے نبی تھے۔ یعنی بعل بت کے پجاری تھے اور آپ سومنات کے بت کے پجاری ہیں۔ جیسا کہ آپ خود (براہین احمدیہ ص۵۵۵، خزائن ج۱ ص۶۶۲ حاشیہ) پر لکھتے ہیں: ’’ربنا عاج ہمارا رب عاجی ہے۔‘‘ اور سعدیؒ مرحوم آج سے کئی سو سال پہلے ہی آپ کے خدا کے بارہ میں فرماگئے ہیں۔ ’’بتے دیدم از عاج درسومنات‘‘ اگر کوئی قادیانی ان چار سو نبیوں کو توریت سے سچا ثابت کر دے تو انعام حاصل کرنے کا مستحق ہوجائے گا۔
  2. ‏ نومبر 1, 2015 #392
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 194(مسجد اقصی سے مراد قادیان ہے۔ معاذاللہ)

    ۱۹۴… ’’اشتہار ۲۸؍مئی ۱۹۰۰ء ’’سبحان الذی اسریٰ‘‘ میں مسجد اقصیٰ سے مسجد اقصیٰ، قادیان مراد ہے۔‘‘
    (مجموعہ اشتہارات ج۳ ص۲۸۹ حاشیہ)
    ابوعبیدہ: ناظرین! اس جھوٹ کے متعلق میں کچھ لکھنا نہیں چاہتا۔ اس کا فیصلہ آپ پر ہی چھوڑتا ہوں۔ صرف اتنا عرض کرتا ہوں کہ بعض آدمی تو صرف جھوٹے ہی ہوتے ہیں اور بعض جھوٹوں کے باپ۔ مگر مرزاقادیانی جھوٹ مجسم ہیں۔
  3. ‏ نومبر 1, 2015 #393
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 195(مرزا قادیانی کی اپنی عمر کے متعلق پیشن گوئی)

    ۱۹۵… ’’ان لوگوں کے منصوبوں کے خلاف خدا نے مجھے وعدہ دیا کہ میں اسی برس یا دو تین برس کم یا زیادہ تیری عمر کروں گا۔ تاکہ لوگ کمی عمر سے کاذب ہونے کا نتیجہ نہ نکال سکیں۔‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۵، خزائن ج۱۷ ص۴۴)
    ابوعبیدہ: یہ ’’خدائی وعدہ‘‘ مرزاقادیانی نے مندرجہ ذیل کتابوں میں درج فرمایا ہے۔
    ۱…(ازالہ خورد ص۶۳۵)،
    ۲…(سراج منیر ص۹۹)،
    ۳…(تریاق القلوب ص۱۳، خزائن ج۱۵ ص۱۵۲ حاشیہ)،
    ۴…(حقیقت الوحی ص۹۶، خزائن ج۲۲ ص۱۰۰)،
    ۵…(اربعین نمبر۳ ص۳۲، خزائن ج۱۷ ص۴۲۲)،
    ۶…(ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۵، خزائن ج۱۷ ص۴۴)،
    ۷…(تحفہ ندوہ ص۲، خزائن ج۱۹ ص۹۳)
    آئیے اب دیکھتے ہیں کہ مرزاقادیانی کی کل عمر کتنی ہوئی؟ اس کے لئے بھی ہم مرزاقادیانی کے اپنے الفاظ پیش کرتے ہیں تاکہ اتمام حجت ہو جائے اور مرزائی دوسرے لوگوں کے قول پیش کر کے اپنے نبی کو جھوٹا نہ کریں۔ تاریخ پیدائش!
    (کتاب البریہ ص۱۵۹، خزائن ج۱۳ ص۱۷۷ حاشیہ، اخبار البدر قادیان مورخہ ۸؍اگست ۱۹۰۴ء) ’’میری پیدائش ۱۸۳۹ء،۱۸۴۰ء میں سکھوں کے آخری وقت میں ہوئی ہے۔‘‘ تاریخ وفات: ہر ایک کو معلوم ہے کہ ۱۳۲۶ھ بمطابق ۱۹۰۸ء ہے۔ پس عمر مرزا ۱۹۰۸ء، ۱۸۴۰ء، ۶۸سال۔ پس مرزاقادیانی جھوٹے ثابت ہوئے۔
  4. ‏ نومبر 1, 2015 #394
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 196(اپنی بیماریوں کے متعلق مرزا کی پیشنگوئی)

    ۱۹۶… ’’اور خدا نے مجھے وعدہ دیا کہ میں تمام خبیث مرضوں سے بھی تجھے بچاؤں گا۔ جیسا کہ اندھا ہونا۔‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۵، خزائن ج۱۷ ص۴۴)
    ابوعبیدہ: یہاں مرزاقادیانی نے دو صریح جھوٹ ارشاد فرمائے ہیں۔
    اوّل… تمام خبیث مرضوں سے بچانے کا خدائی وعدہ۔ مرزاقادیانی خود تسلیم کرتے ہیں کہ میں مراق (مالیخولیا) اور ذیابیطس کی بیماریوں میں مبتلا ہوں۔
    (اخبار بدر قادیان مورخہ ۷؍جون ۱۹۰۶ء)
    ان سے بڑھ کر اور کون سی خبیث امراض ہوتی ہیں؟ مراق جس نے دماغ کو جادۂ اعتدال سے الگ کر دیا تھا اور ذیابیطس جس کے باعث مرزاقادیانی کو دو دو صد بار روزانہ پیشاب آتا تھا۔ کیا ایسے آدمی سے دینی امور میں پاکیزگی کا تصور بھی ہوسکتا ہے جو شخص ہر آٹھ منٹ بعد پیشاب کی حاجت محسوس کرے؟ کیا اس کے کپڑے، بدن، خیالات اور دماغی توازن قائم رہ سکتا ہے؟ پھر مرض بھی ذیابیطس کی ہو۔ سبحان اﷲ! خدا نے اچھا وعدہ پورا کیا دوسرا جھوٹ یہ کہ اندھا ہونے کو خبیث مرض قرار دیا۔
  5. ‏ نومبر 1, 2015 #395
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 197(مسیح کے زمانے میں طاعون پڑے گا، نبی کریمﷺ پر جھوٹ)

    ۱۹۷… ’’اور یہ بھی حدیثوں میں تھا کہ مسیح موعود کے وقت میں طاعون پڑے گی۔‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۸، خزائن ج۱۷ ص۴۹)
    ابوعبیدہ: صریح جھوٹ ہے۔ اگر سچے ہو تو کم ازکم ایک ہی حدیث دکھا دو۔ ہم انعام دے دیں گے۔ کیوں رسول پاکﷺ پر افتراء کر رہے ہو؟
  6. ‏ نومبر 1, 2015 #396
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرز 198(جھوٹے نبی کو خدا مہلت نہیں دیتا)

    ۱۹۸… ’’خداتعالیٰ نے ایک بڑا اصول جو قرآن شریف میں قائم کیا تھا اور اسی کے ساتھ نصاریٰ اور یہودیوں پر حجت قائم کی تھی۔ یہ تھا کہ خداتعالیٰ اس کاذب کو جو نبوت یا رسالت اور مأمور من اﷲ ہونے کا جھوٹا دعویٰ کرے مہلت نہیں دیتا۔‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۱۲، خزائن ج۱۷ ص۵۴)
    ابوعبیدہ: روز روشن میں جھوٹ بولتے ہو اور شرم نہیں آتی۔ تمہارے اپنے عقیدہ کے مطابق ۲۳سال سے کم تک تو جھوٹے نبی کو مہلت مل سکتی ہے۔ دیکھو اگلا جھوٹ۔
  7. ‏ نومبر 1, 2015 #397
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 199(خدا تعالی جھوٹے نبی کو 23 سال مہلت دیتا ہے)

    ۱۹۹… ’’اگر کوئی ایسا دعویٰ کرے کہ میں خدا کا نبی یا رسول یا مأمور من اﷲ ہوں اور اس دعویٰ پر تیئس یا پچیس برس گزر جائیں… اور وہ شخص فوت نہ ہو اور نہ قتل کیا جائے۔ ایسے شخص کو سچا نبی اور مامور نہ ماننا کفر ہے۔ کیونکہ اس سے خدا کے کلام کی تکذیب وتوہین لازم آتی ہے۔ ہر ایک عقلمند سمجھ سکتا ہے کہ خداتعالیٰ نے قرآن شریف میں آنحضرتﷺ کی رسالت حقہ ثابت کرنے کے لئے اسی استدلال کو پکڑا ہے۔ اگر یہ شخص خداتعالیٰ پر افتراء کرتا تو میں اس کو ہلاک کر دیتا۔‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۱۳، خزائن ج۱۷ ص۵۴،۵۵)
    ابوعبیدہ: سبحان اﷲ! کیا یہی وہ تفسیر دانی ہے۔ جس پر مرزاقادیانی ناز کیا کرتے تھے۔ مرزاقادیانی کلام اﷲ میں تحریف کر رہے ہیں۔ آیت ’’ولو تقول علینا‘‘ کا ہرگز ہرگز یہ مطلب نہیں کہ خداتعالیٰ جھوٹے مدعیان الہام کو تیئس ۲۳یا پچیس برس تک مہلت نہیں دیتا۔ آیت کا ترجمہ خود مرزاقادیانی نے لکھا ہے۔ اس میں مجرو مہلت کا ذکر ہے۔ ۲۳ یا ۲۵برس کی قید کہیں نہیں لگائی گئی۔ بلکہ جس وقت یہ آیت نازل ہوئی ہے۔ اس وقت رسول پاکﷺ کی بعثت کو بارہ تیرہ برس سے زیادہ عرصہ نہیں ہوا تھا۔ پھر یہ ۲۳یا۲۵برس کی مہلت مرزاقادیانی کا سفید جھوٹ نہیں تو اور کیا ہے؟
  8. ‏ نومبر 1, 2015 #398
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 200(تو مجھ سے بمنزلہ توحید و تفرید کے ہے)

    ۲۰۰… ’’الہام مرزا: ترجمہ از مرزاقادیانی، تو مجھ سے ایسا ہے جیسا کہ میری توحید اور تفرید۔‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۱۵، خزائن ج۱۷ ص۵۹)
    ابوعبیدہ: کلام اﷲ میں جب یہ درجہ رسول کریمﷺ کے واسطے بھی مذکور نہیں۔ جن کی شان میں ہے۔ ’’لولاک لما خلقت الافلاک‘‘ پھر غلام احمد کے لئے یہ کیسے تجویز ہوسکتا ہے۔ کیا! غلام آقا سے بھی بڑھ گیا؟ ’’انا ﷲ وانا الیہ راجعون‘‘ پس یہ الہام نہیں۔ یہ خدا پر صریح افتراء ہے۔
  9. ‏ نومبر 1, 2015 #399
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 201(مرزا کا جھوٹا الہام"مجھے رحمت بنا کر بھیجا گیا")

    ۲۰۱… الہام مرزا: ’’وما ارسلنک الا رحمۃ للعالمین‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۱۵، خزائن ج۱۷ ص۵۹)
    اے مرزا ہم نے تجھے تمام جہاں کے لئے رحمت بنا کر بھیجا ہے۔
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۱۵، خزائن ج۱۷ ص۵۹)
    ابوعبیدہ: یہ بھی خداتعالیٰ پر افتراء ہے۔ یہ آیت صرف رسول پاکﷺ کی شان میں ہی وارد ہوسکتی ہے۔ غلام احمد ہوکر احمد کے برابر کیسے ہوسکتا ہے؟
  10. ‏ نومبر 1, 2015 #400
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    کذبات مرزا 202(اللہ مرزا کی تعریف عرش پر کرتا ہے)

    ۲۰۲… ’’الہام مرزا: ’’یحمدک اﷲ من عرشہ‘‘ وہ عرش پر سے تیری تعریف کرتا ہے۔‘‘
    (ضمیمہ تحفہ گولڑویہ ص۱۵، خزائن ج۱۷ ص۶۰)
    ابوعبیدہ: ناظرین غور تو کرو۔ تمام دنیا ومافیہا تو حمد کرے۔ اﷲ تبارک وتعالیٰ کی اور اﷲتعالیٰ حمدکریں مرزاقادیانی کی۔ اس سے بڑھ کر تو جھوٹ ممکن ہی نہیں۔ پس یہ بھی افتراء علی اﷲ ہے۔
    نوٹ: جناب کاتب صاحب نے دو جھوٹ زائد از اعلان درج کر دئیے ہیں۔ مرزاقادیانی کے ہاں جھوٹوں کی کوئی کمی ہے۔

اس صفحے کی تشہیر