1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ

    تحفظ ناموس رسالتﷺ و ختم نبوت پر دنیا کی مایہ ناز کتب پرٹائپنگ ، سکینگ ، پیسٹنگ کا کام جاری ہے۔آپ بھی اس علمی کام میں حصہ لیں

    ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ
  3. ہمارا وٹس ایپ نمبر whatsapp no +923247448814
  4. [IMG]
  5. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

اللہ کی بارگاہ میں تین شخص ناپسند ترین ہیں:

Amina نے 'آیاتِ ختم نبوت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ فروری 1, 2020

  1. ‏ فروری 1, 2020 #1
    Amina

    Amina رکن ختم نبوت فورم

    حدیث مبارک


    نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا:

    *«أَبْغَضُ النَّاسِ إِلَى الله ثَلَاثَة ملحد فِي الْحرم وميتغ فِي الْإِسْلَام سنة الْجَاهِلِيَّة ومطلب دم امرىء بِغَيْر حق ليهريق دَمه»*
    ﷲ کی بارگاہ میں تین شخص ناپسند ترین ہیں:
    1-حرم میں بے دینی کرنے والا
    2- اسلام میں جاہلیت کے طریقے کا متلاشی
    3- مسلمانوں کے خون ناحق کا جویاں تاکہ اس کی خونریزی کرے
    *(مشکوۃ شریف،حدیث نمبر:142)*
    *شرح حديث:*
    *حرم میں بے دینی کرنے والا*
    الحاد کے معنی ہیں میلان اور جھکنا۔ شریعت میں باطل کی طرف جھکنے والے کو ملحد کہتے ہیں۔ بدعقیدہ اور گنہگار دونوں ملحد ہیں، یعنی حدود مکہ مکرمہ میں گناہ کرنے والا یا گناہ پھیلانے والا یا بدعقیدگی اختیار کرنے والا یا رائج کرنے والا کہ اگرچہ یہ حرکتیں ہر جگہ ہی بری ہیں مگر حرم شریف میں بہت زیادہ بری کہ اس مقام کی عظمت کے بھی خلاف ہے اور جیسے حرم میں ایک نیکی کا ثواب ایک لاکھ ایسے ہی ایک گناہ کا عذاب بھی ایک لاکھ ہے اسی لیے حضرت ابن عباس نے مکہ چھوڑ کر طائف میں قیام کیا۔

    *اسلام میں جاہلیت کے طریقے کا متلاشی*

    یعنی مسلمان ہو کر مشرکانہ رسوم کو پسند کرے اور پھیلائے جیسے نوحہ، سینہ کوبی، فال نکالنا وغیرہ اس سے روافض کو عبرت چاہیئے کہ انہوں نے جاہلیت کی رسموں کو عبادت سمجھ رکھا ہے۔

    *مسلمانوں کے خون ناحق کا جویاں تاکہ اس کی خونریزی کرے*

    یعنی مسلمان کو ظلمًا قتل کرنا تو بڑا گناہ ہے قتل کی کوشش بھی بدترین جرم ہے۔ اس میں وہ سب لوگ داخل ہیں جو بے قصور کو قتل کریں، کرائیں، مشورہ دیں اور قتل کے بعد قاتل کو ناحق چھڑانے کی کوشش کریں۔

    [مرآۃ المناجیح شرح مشکوۃ المصابیح]

اس صفحے کی تشہیر