1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. [IMG]
  3. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

ختم نبوت اور احادیث نبویہ حدیث نمبر 8

محمدابوبکرصدیق نے 'دلائل ختم نبوت از روئے احادیث شریف' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ ستمبر 15, 2014

  1. ‏ ستمبر 15, 2014 #1
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    ختم نبوت اور احادیث نبویہ حدیث نمبر 8

    ’’ عن عقبۃ بن عامر ؓ قال قال رسول اﷲ ﷺ لوکان بعدی نبی لکان عمر بن الخطاب ۰ ترمذی ص ۲۰۹ ج ۲ ‘‘ {حضرت عقبہ بن عامرؓ سے روایت ہے کہ حضور ﷺ نے ارشاد فرمایا اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا تو عمر بن خطاب ؓ ہوتے۔}
    یہ حدیث حضرت عقبہ بن عامرؓ کے علاوہ مندرجہ ذیل حضرات سے بھی مروی ہے:
    ۱……حضرت ابوسعید خدری ؓ (فتح الباری ص ۵۱ ج ۷‘ مجمع الزوائد ص ۶۸ج۹)
    ۲…… عصمہ بن مالک ؓ (مجمع الزوائد ص ۶۸ج۹)
    ’’ لو ‘‘ کا لفظ فرض محال کے لئے آتا ہے۔ حدیث کا مطلب یہ ہے کہ حضرت عمر ؓ میں نبوت کی صلاحیت کامل طور پر پائی جاتی ہے۔ مگر چونکہ آپﷺ کے بعد کسی کا نبی ہونا محال ہے اس لئے باوجود صلاحیت کے حضرت عمر ؓ نبی نہیں بن سکے۔ امام ربانی مجدد الف ثانی قدس سرہ ؒ فرماتے ہیں:
    ’’ درشان حضرت فاروقؓ فرمودہ است علیہ وعلیٰ الہ الصلوٰۃ والسلام ’’ لوکان بعدی نبی لکان عمر ؓ‘‘ یعنی لوازم وکمالاتیکہ درنبوت درکار است ہمہ راعمرؓدارد اما چوںمنصب نبوت بخاتم الرسل ﷺ ختم شدہ است علیہ وعلیٰ الہ الصلوٰۃ والسلام بدولت منصب نبوۃ مشرف نگشت۰ مکتوب ۲۴ ص ۲۳ دفتر سوم‘‘{حضرت فاروق اعظمؓ کی شان میں آنحضرت ﷺ نے فرمایا :’’ اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا توعمرؓ ہوتے۔‘‘ یعنی وہ تمام لوازمات وکمالات جو نبوت کے لئے درکار ہیں سب حضرت عمر ؓ میں موجود ہیں۔لیکن چونکہ منصب نبوت خاتم الرسل ﷺ پرختم ہوچکا ہے اس لئے وہ منصب نبوت کی دولت سے مشرف نہیں ہوئے۔}
    • Like Like x 2
  2. ‏ ستمبر 15, 2014 #2
    بنت اسلام

    بنت اسلام رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    لکھتا ہوں خونِ دل سے یہ الفاظِ احمریں
    بعد از رسول صل اللہ علیہ وسلم ہاشمی کوئی نبی نہیں
    • Like Like x 1

اس صفحے کی تشہیر