1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. [IMG]
  3. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

ختم نبوت پراعترض نمبر۵۱:درود شریف

محمدابوبکرصدیق نے 'عقیدہ ختم نبوت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ ستمبر 28, 2014

  1. ‏ ستمبر 28, 2014 #1
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    ختم نبوت پراعترض نمبر۵۱:درود شریف
    قادیانی: ’’اللھم صلی علی محمد وعلیٰ آل محمد کما صلیت علیٰ ابراھیم وعلیٰ آل ابراھیم انک حمید مجید۰ اللھم بارک علیٰ محمد وعلیٰ آل محمد کما بارکت علیٰ ابراھیم وعلیٰ آل ابراھیم انک حمید مجید۰‘‘
    حضرت ابراھیم علیہ السلام اور ان کی اولاد پر خیروبرکت نبوت ورسالت تھی۔ اس قسم کی برکات اور رحمتیں آل محمد پرہونی چاہئیں۔ ورنہ لفظ ’’کما ‘‘ کا لانا صحیح نہ ہوگا۔
    جواب ۱: درود شریف میں جس خیروبرکت کا ذکر ہے اس سے کثرت اولاد اور بقاء نسل مراد ہے۔ جیسا کہ اس آیت سے ظاہر ہے :’’ قالوا اتعجبین من امراﷲ رحمۃ اﷲ وبرکاۃ علیکم اھل البیت انہ حمید مجید۰ ھود ۷۳‘‘تفسیر عثمانی میں ہے کہ بعض محققین نے لکھا ہے کہ درود ابراھیمی اس آیت شریف سے اقتباس کیا گیا ہے۔ اس میں حضرت سارہ کو اولاد کی بشارت دیتے ہوئے ارشاد فرمایا گیا ہے ۔ خیروبرکت اولاد والی مراد ہے۔عطاء نبوت کا اس میں کوئی ذکر نہیں۔ اس لئے درود شریف میں نبوت ورسالت کی برکت مراد نہیں۔
    جواب ۲: اگر صل یا بارک سے نبوت مراد ہے تو :’’صلی علی محمد۰بارک علی محمد‘‘کے معنی یہ ہوں گے محمد ﷺ کو نبوت کی برکت عطا فرما۔ حضور ﷺ نبی ہوتے ہوئے اپنے لئے نبوت کی دعا کررہے ہیں اور امت بھی حضور ﷺ کے لئے عطاء نبوت کی دعا کررہی ہے۔ یہ بات نہ صرف بیہودہ ہے بلکہ بداہۃً غلط ہے۔
    جواب ۳: ابراھیم علیہ السلام کی اولاد میں تو مستقل وتشریعی نبی تھے۔ کیا حضور ﷺ کی اولاد میں بھی تشریعی نبی ہوں گے؟۔ یہ تو مرزائیوں کے عقیدہ کے بھی خلاف ہے۔
    جواب ۴: ابراھیم علیہ السلام کی اولاد میں مستقل نبوت کا سلسلہ چلا۔حضور ﷺ کی اولاد میں چودہ سو سال میں کوئی بھی نہ بنا۔اور بقول مرزائیوں کے جو بنا ‘ نہ وہ حضور ﷺ کی اولاد سے تھااور بنا بھی ظلی وبروزی۔(چلی وموذی) جس ظلی وبروزی کا ابراھیم علیہ السلام کی اولاد میں ذکر ہی نہیں۔ غرض مرزا کی تحریف کو تسلیم بھی کرلیں تو ’’ کما ‘‘ کا کمال یہ ہے کہ اس کے معنی مرزا پر فٹ نہیں آتے۔ اس مرزائی تحریف پر سوائے :’’ سبحانک ھذا بہتان عظیم۰‘‘کے سوا اور کیا کہا جاسکتا ہے؟۔
    جواب ۵: حضور ﷺ کی شریعت اتنی اعلیٰ ‘ افضل ‘ اکمل اور اتم ہے کہ ایک لاکھ چوبیس ہزار انبیاء علیہم السلام کی تمام شریعتیں مل کر آپ ﷺ کی شریعت کا مقابلہ نہیں کرسکتیں۔ آج سے چودہ سو سال قبل آپ ﷺ کو جو شریعت ملی اس کا مقابلہ ہوہی نہیں سکتا۔ کیا یہ آپ ﷺ کی گستاخی نہیں کہ آپ جیسی شریعت کے ہوتے ہوئے اس کے مقابل حضرت ابراھیم علیہ السلام اور ان کی اولاد جیسی نعمت (شریعت) مانگیں:’’ اتستبدلون الذی ادنی باالذی ھوخیر۰‘‘
    جواب ۶: قادیانی جاہلوں کو معلوم ہونا چاہئیے کہ یہاں لفظ کما ہے جس سے قادیانی مشابہت تامہ سمجھ رہے ہیں۔حالانکہ مشبہ اور مشبہ بہ میں مشابہت تامہ من کل الوجوہ نہیں ہواکرتی۔ بلکہ ایک جز میں مشابہت کی وجہ سے ایک چیز کو دوسری چیز سے مشابہت دے دی جاتی ہے۔ بقائے ونسل وغیرہ سے کما کی تشبیہ کا تقاضا سوفیصد پورا ہوگیا ۔ خود مرزا قادیانی نے لکھا ہے:
    ’’یہ ظاہر ہے کہ تشبیہات میں پوری پوری تطبیق کی ضرورت نہیں ہوتی ہے۔ بلکہ بسا اوقات ایک ادنی مماثلت بلکہ صرف ایک جز میں مشارکت کے باعث ایک چیز کا نام دوسری چیز پر اطلاق کردیتے ہیں۔‘‘(ازالہ اوہام ص ۷۲ حاشیہ روحانی خزائن ص ۱۳۸ ج ۳)
    خلاصہ یہ کہ درود شریف میں جن رحمتوں وبرکتوں کو طلب کیا جاتا ہے وہ نبوت کے علاوہ ہیں۔ وجہ یہ کہ آیت :’’ الیوم اکملت لکم دینکم ۰‘‘اور آیت :’’ ولکن رسول اﷲ وخاتم النبیین۰‘‘میں صریح نبوت کو آنحضرت ﷺ پر ختم کرچکا ہے۔ (تحفہ گولڑویہ ص ۵۲ روحانی خزائن ص ۷۴ ۱ ج۱۷)
    • Like Like x 1

اس صفحے کی تشہیر