1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. [IMG]
  3. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

ختم نبوت پر قادیانی اعتراضات (اعتراض نمبر۴۷:فیکم الخلافۃ وفیکم النبوۃ)

محمدابوبکرصدیق نے 'عقیدہ ختم نبوت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ ستمبر 28, 2014

  1. ‏ ستمبر 28, 2014 #1
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    ختم نبوت پر قادیانی اعتراضات (اعتراض نمبر۴۷:فیکم الخلافۃ وفیکم النبوۃ)
    قادیانی: حجج الکرامۃ ص ۱۹۷ پر ہے کہ آنحضرت ﷺ نے حضرت عباس ؓ کوفرمایا :’’ الخلافۃ فیکم والنبوۃ۰‘‘اس کے معنی یہ ہے کہ نبوت جاری ہے۔
    جواب ۱:اصل یہ ایک روایت نہیں تین روایتیں ہیں جو مسند احمد ص ۲۸۳ ج ۱۲ پر موجود ہیں۔ ان کو سامنے رکھیں تو قادیانی دجل تار عنکبوت سے بھی کمزور نظر آئے گا۔ روایت نمبر ۱۶۷۳ حضرت ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے کہ آپ ﷺ نے حضرت عباس ؓ سے فرمایا :’’ الخلافۃ فیکم والنبوۃ۰ ‘‘ روایت نمبر ۱۶۷۴ حضرت ابوہریرہ ؓسے کہ آپ ﷺ نے حضرت عباس ؓ سے فرمایا :’’ فیکم النبوۃ والخلافۃ۰‘‘ روایت نمبر۱۶۷۸ حضرت ابن عباس ؓ سے کہ آپ ﷺ نے حضرت عباس ؓ سے فرمایا :’’ لی النبوۃ ولکم الخلافۃ۰‘‘ان تینوں روایتوں کو سامنے رکھیں تو مسئلہ حل ہوجاتا ہے۔ کہ آ پ ﷺ کے فرمان مبارک کا منشاء کیا تھا۔ نبوت وخلافت قریش میں ہے۔ میں نبی (قریشی) ہوں۔ تم (قریش) میں خلافت ہوگی۔
    جواب ۲:جہاں تک حججالکرامۃ کی روایت ہے اس کے ساتھ ہیحججالکرامۃ میں ہی لکھا ہے :’’اخرجہ البزاز درسندش محمد عامری ضعیف است۰‘‘غرض یہ روایت سنداً ضعیف ہے۔ قادیانی علم الکلام کا معیار دیکھئے کہ عقائد کے لئے ضعیف روایات کو سہارا بنایا جارہا ہے ۔ سچ ہے :’’ ڈوبتے کو تنکے کا سہارا‘‘
    جواب ۳:یہ روایت جہاں سنداً ضعیف ہے وہاں درایتہ بھی غلط ہے۔اس لئے کہ آج تک بنوعباس ؓ میں کوئی نبی نہیں ہوا۔
    جواب ۴:خیر سے یہ روایت صحیح بھی ہوتی تو بھی مرزا کے لئے مفید نہ تھی۔ اس لئے کہ آن دجال مرزا قادیانی تو مغل تھے۔(کتاب البریہ ص ۱۳۴ روحانی خزائن ص ۱۶۲ ج ۱۳)
    • Like Like x 1

اس صفحے کی تشہیر