1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. [IMG]
  3. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

زمین و آسمان کی طویل مسافت؟

غلام نبی قادری نوری سنی نے 'متفرقات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ اکتوبر 28, 2015

  1. ‏ اکتوبر 28, 2015 #1
    غلام نبی قادری نوری سنی

    غلام نبی قادری نوری سنی رکن ختم نبوت فورم

    زمین و آسمان کی طویل مسافت؟

    سوال۔۔۔
    زمین سے آسمان تک کی طویل مسافت کا چند لمحوں میں طے کر لینا کیسے ممکن ہے؟ جواب مرزا صاحب لکھتے ہیں کہ.... پھر مضمون پڑھنے والے نے قرآن مجید پر یہ اعتراض کیا کہ اس میں لکھا ہے کہ حضرت عیسٰی علیہ السلام نے مع گوشت پوست آسمان پر چڑھ گیا تھا ہماری طرف سے یہ جواب کافی ہے اول تو.. خدا تعالٰی کی قدرت سے کچھ بعید نہیں کہ انسان مع جسم حضری آسمان پر چڑھ جائے..( چشمہ معرفت 219 خزائن جلد 23 صفحہ 227-228)

    اور میں اپنے مطلب کے اس ثبوت میں تو رات کی عبادت استدلال پیش کرتا ہوں جس میں یہ بھی لکھا ہے ایلیا نبی جسم کے ساتھ آسمان کی طرف اٹھایا گیا اور چادر اس کی زمین پر گر پڑی( ازالہ اوہام صفحہ 22 7 خزائن جلد 3 صفحہ 238)

    2..سلمان علیہ السلام کے لئے ہوا کا مسخر ہونا بھی قرآن کریم میں مذکور ہے کہ وہ ہوا جہاں چاہے حضرت سلیمان علیہ السلام کے تخت کو اڑا کر لے جائے اور مہینوں کی مسافت گھنٹوں میں طے کرتی.. کما قال وتعال سخرنا لہ ریخ وتجری بامرہ.
    3..آج کل کے ملحدین تین سو میل فی گھنٹہ کیا عندہ رفتار سے مسافت طے کرنے والے جہاز پر تو ایمان لے آئے ہیں مگر نا معلوم سلیمان علیہ السلام کےتخت پر ایمان لاتے بھی ہیں یا نہیں؟ ہوائ جہاز بندہ کی بنائی ہوئی مشین سے اڑاتا ہے اور سلیمان علیہ السلام کے تخت کو ہوا بحکم خداوندی اڑا کر لے جاتی تھی کسی بندہ کے عمل اور صنعت کو اس میں دخل نہ تھا اس لیے وہ معجزہ تھا اور ہوائی جہاز معجزہ نہیں..
    4...آصف بن برخیا کا مہینوں کی مسافت سے بلقیس کا تخت حضرت سلیمان علیہ السلام کی خدمت میں پلک جھپکنے سے پہلے حاضر کر دینا قرآن مجید میں مصرح ہے( کما قال تعالٰی و قال الذی عندہ علم من الکتاب انا الیک بہ ای یرتد الیک طرفک فلما راہ مستقر قال ھذا من فضل ربی)النمل40... ترجمہ.. جس کے پاس کتاب کا علم تھا وہ بول اٹھا کہ... آپ پلک جھکائیں اس سے پہلے میں اسے آپ کے پاس پہنچا سکتا ہوں جب آپ نے اسے اپنے پاس موجود پایا تو فرمانے لگے یہی میرے رب کا فضل ہے
    5...شیاطین اور جنات کا شرق سے غرب تک آن واحد میں اس قدر طویل مسافت کا طے کر لینا ممکن ہے تو کیا خداوند عالم اور قادر مطلق کے لیے یہ ممکن نہیں کہ وہ کسی خاص بندے کو اس قدر طویل مسافت طے کرا دے؟؟

    6...روشنی ایک منٹ میں ایک کروڑ بیس لاکھ میل کی مسافت طے کرتی ہے..
    7...بجلی ایک منٹ میں پانچ سو مرتبہ زمین کے گرد گھوم سکتی ہے؟؟

    8...اور بعض ستارے ایک ساعت میں آٹھ لاکھ اسی ہزار میل حرکت کرتے ہیں... خلاصہ بحث:::
    !! مندرجہ بالا دلائل سے ثابت ہوتا ہے کہ زمین سے آسمان تک کا فاصلہ چند لمحوں میں طے کر لینا اللہ کی قدرت سے بعید نہیں
    مدیر کی آخری تدوین : ‏ اکتوبر 28, 2015
  2. ‏ اکتوبر 28, 2015 #2
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    تمام پوسٹ کا کلر کالا رکھیں ، عربی عبارت پر عربی فونٹ لگائیں اور بولڈ نہ کریں، حوالہ جات کو الگ کلردیں۔ اس سے پوسٹ میں خوبصورتی پیدا ہو گی۔

اس صفحے کی تشہیر