1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ

    تحفظ ناموس رسالتﷺ و ختم نبوت پر دنیا کی مایہ ناز کتب پرٹائپنگ ، سکینگ ، پیسٹنگ کا کام جاری ہے۔آپ بھی اس علمی کام میں حصہ لیں

    ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ
  3. ہمارا وٹس ایپ نمبر whatsapp no +923247448814
  4. [IMG]
  5. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

قادیانی سوالات کے جوابات ( 11 کیا قادیانیوں کو گالیاں دی جاتی ہیں؟)

محمدابوبکرصدیق نے 'متفرق قادیانی اعتراضات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ اکتوبر 23, 2014

  1. ‏ اکتوبر 23, 2014 #1
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    قادیانی سوالات کے جوابات ( 11 کیا قادیانیوں کو گالیاں دی جاتی ہیں؟)
    سوال نمبر:۱۱… قادیانیوں کو گالیاں دی جاتی ہیں؟
    جواب… ہم کبھی کبھار گفتگو میں مرزاقادیانی کی کتابوں سے اس کی ’’مقدس زبان‘‘ کے نمونے پیش کرتے ہیں تو مرزائی پروپیگنڈہ کرتے ہیں کہ مولوی صاحبان گالیاں دیتے ہیں۔ مگر میرا دعویٰ ہے کہ ساری کائنات کے بدزبان لوگوں کا عالمی کنونشن بلایا جائے تو بدزبانوں کے ’’عالمی چمپئن شپ‘‘ کا اعزاز مرزاقادیانی کو ملے گا۔ اس لئے کہ الف سے لے کر یا تک کوئی ایسی گالی نہیں جو مرزاقادیانی نے اپنے مخالفین کو نہ دی ہو۔ اس سلسلہ میں ہمارے بزرگ رہنما مولانا نور محمدخان سہارن پوریؒ کا رسالہ جو عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی دفتر ملتان پاکستان نے بھی شائع کیا ہے۔ جس کا نام ہے ’’مغلظات مرزا‘‘ اور دوسرا رسالہ جس کا نام ہے ’’مرزاقادیانی کا حسن کلام‘‘ ہمارے ساتھی جناب اشتیاق احمد جو لاہور پاکستان کے معروف ناول نگار ہیں۔ انہوں نے لکھا ہے۔ وہ دیکھے جاسکتے ہیں۔ ان سے معلوم ہوگا کہ مرزاقادیانی کے اخلاق واطوار کیا تھے؟۔ مرزاقادیانی کی کتاب (آئینہ کمالات اسلام ص۵۴۷، خزائن ج۵ ص ایضاً) پر ہے: ’’تلک کتب ینظر الیہا کل مسلم بعین المحبۃ والمودۃ وینتفع من معارفہا ویقبلنی ویصدق دعوتی الا ذریۃ البغایا۰ الذین ختم اﷲ علی قلوبہم فہم لا یقبلون‘‘ میری ان کتابوں کو تمام مسلمان محبت وشفقت کی نظر سے دیکھتے ہیں، اور اس کے معارف سے فائدہ اٹھاتے ہیں، اور مجھے قبول کرتے ہیں اور میرے دعوؤں کی تصدیق کرتے ہیں۔ مگر کنجریوں کی اولاد جن کے دلوں پر اﷲتعالیٰ نے مہر کر دی ہے وہ مجھے نہیں مانتے۔‘‘
    تو اس کتاب میں مرزاقادیانی نے اپنے نہ ماننے والے مسلمانوں کو کنجریوں کی اولاد کہا ہے، اور پھر لطف یہ کہ اس کا اپنا بیٹا مرزافضل احمد مرزاقادیانی کو نہیں مانتا تھا۔ تو مرزاقادیانی کے فتویٰ کے مطابق وہ بھی کنجری کا بیٹا ہوا۔ جب اس کی ماں کنجری ہوئی تو ثابت ہوا کہ مرزاقادیانی کی بیوی کنجری تھی۔ جس کی بیوی کنجری ہو وہ خود کون ہوگا؟ اور جو کنجر کو نبی مانیں وہ کون ہوں گے؟ مسلمانوں پر فتویٰ لگایا اور خود اس کی زد میں آگئے۔ مرزائی کہتے ہیں کہ: ’’ذریۃ البغایا‘‘ کا معنی کنجریوں کی اولاد نہیں۔ بغیہ کا معنی کنجری، بدکار ہوتا ہے۔ قرآن مجید میں ہے کہ: ’’وما کانت امک بغیا‘‘ جب مریم علیہا السلام بیٹا لائیں تو یہودیوں نے کہا کہ آپ کی ماں تو ایسی نہ تھی۔
    مرزاقادیانی نے اپنی کتاب (انجام آتھم ص۲۸۲، خزائن ج۱۱ ص ایضاً) پر ’’ابن مغایا‘‘ کا نیچے خود ترجمہ کیا ہے: ’’نسل بدکاراں۔‘‘
    اور (نور الحق ج۱ ص۱۲۳، خزائن ج۸ ص۱۶۳) پر ’’ذریۃ البغایا‘‘ کا معنی خود کیا ہے: ’’خراب عورتوں کی نسل۔‘‘
    اسی طرح مرزاقادیانی نے (خطبہ الہامیہ ص۴۹، خزائن ج۱۶ ص۴۹) پر ’’رقص البغایا‘‘ کا معنی کیا ہے۔ ’’رقص زنان بازاری۔‘‘
    (لجتہ النور ص۹۲، خزائن ج۱۶ ص۴۲۸) پر ’’البغی‘‘ کا معنی ’’زن فاحشہ‘‘ (لجتہ النور ص۹۲، خزائن ج۱۶ ص۴۲۸) پر ’’البغایا‘‘ کا معنی ’’زنان بازاری، ہمچوزنان بازاری‘‘ (لجتہ النور ص۹۳، خزائن ج۱۶ ص۴۲۹) پر ’’ان البغایا ‘‘ کا معنی ’’زنان فاحشہ‘‘ (لجتہ النور ص۹۴، خزائن ج۱۶ ص۴۳۰) پر ’’البغایا‘‘ کا معنی ’’زنان فاسقہ‘‘ (لجتہ النور ص۹۴، خزائن ج۱۶ ص۴۳۰) پر ’’نطفۃ البغایا‘‘ کا معنی ’’نطفہ زنان بازاری‘‘ (لجتہ النور ص۹۵، خزائن ج۱۶ ص۴۳۱) پر ’’ان البغایا‘‘ ’’زنان فاحشہ‘‘ کیا ہے۔ دیکھئے (لجتہ النور ص۹۲تا۹۵، خزائن ج۱۶ ص۴۹،۴۲۸تا۴۳۱)
    اب ان تصریحات کے بعدکوئی شخص کہے کہ مرزاقادیانی نے مسلمانوں کو کنجریوں کی اولاد نہیں کہا یا یہ کہ: ’’ذریۃ البغایا‘‘ کا معنی کنجریوں کی اولاد نہیں تو ہم قادیانیوں کو ذریۃ البغایا کہتے ہیں۔ وہ آ مین کہہ دیں۔ اب سوائے اس کے کہ ہم اس کی ہدایت کے لئے دعا کریں اور کیا کہہ سکتے ہیں؟۔

اس صفحے کی تشہیر