1. Photo of Milford Sound in New Zealand
  2. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  3. Photo of Milford Sound in New Zealand
  4. Photo of Milford Sound in New Zealand

قادیانی سوالات کے جوابات ( 5 قادیانی جماعت برابر بڑھ رہی ہے کیا یہ انکے سچا ہونے کی علامت ہے؟)

محمدابوبکرصدیق نے 'متفرق قادیانی اعتراضات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ اکتوبر 23, 2014

  1. ‏ اکتوبر 23, 2014 #1
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    قادیانی سوالات کے جوابات ( 5 قادیانی جماعت برابر بڑھ رہی ہے کیا یہ مرزاقادیانی کے سچا ہونے کی علامت ہے؟)
    سوال نمبر:۵… اﷲتعالیٰ جھوٹے مدعی نبوت کو مہلت نہیں دیتا۔ جب کہ مرزاقادیانی کی جماعت مرزائیہ برابر بڑھ رہی ہے۔ معلوم ہوا کہ مرزاقادیانی سچا تھا۔
    جواب… یہ اصول سراسر غلط ہے کہ اﷲتعالیٰ جھوٹے کو مہلت نہیں دیتا۔ دیکھئے! شیطان سے بڑھ کر اور کون جھوٹا ہوگا؟ وہ کب سے مہلت پر ہے اور تاقیامت مہلت پر رہے گا۔ کیا یہ شیطان کے سچا ہونے کی دلیل ہے؟ رہا جھوٹا مدعی نبوت؟ تو دنیا میں مرزاقادیانی سے قبل ایک نہیں بے شمار جھوٹے مدعی نبوت گذرے ہیں۔ جنہوں نے طویل زندگی پائی ہے۔ مثلاً ایران میں ایک شخص صالح بن طریف ہوا۔ وہ دعویٔ نبوت کے بعد سنتالیس (۴۷) سال تک زندہ رہا۔ اور اس کی اولاد نے تین سو سال تک حکومت کی۔ کیا یہ اس کے سچا ہونے کی دلیل ہے؟ ان جھوٹے مدعیان نبوت کے مہلت پانے کی تفصیل دیکھنی ہو تو مولانا ابوالقاسم محمد رفیق دلاوری رحمۃُ اللہ علیہ کی کتاب ’’ائمہ تلبیس‘‘ دیکھ لیں۔ جس میں یہ لکھا ہوا ہے کہ ان مدعیان نبوت نے دعویٰ نبوت کے بعد عرصہ تک مہلت پائی ہے۔ کیا یہ ان کے سچا ہونے کی دلیل ہے؟ یہ یاد رکھیں کہ صادق کے صدق اور کاذب کے کذب میں کسی مدت دعویٰ کو قطعاً دخل نہیں۔ جس سے یہ سمجھا جاسکے کہ وہ سچا تھا یا جھوٹا؟۔
    اسی طرح حضرت موسی علیہ السلام نے تقریبا 950 سال تک تبلیغ کی مگر ایک سو لوگ بھی ان پر ایمان نہ لائے اور فرعون کا لشکر حضرت موسی علیہ السلام کے لشکر سے کئی گناء بڑا تھا ۔ اب قادیانی خود فیصلہ کرنے کہ سچا کون تھا ؟؟ کم تعداد والے یا زیادہ تعداد والے؟؟
    اسی طرح مزید آگے آتے ہیں تو حضرت عیسی علیہ السلام کے امتی جن کا سورۃ الکھف میں جن لوگوں کا ذکر ہے ان کی تعداد صرف 6 یا 7 تھی جب کہ ان کے مقابلے میں ایڈریم (خدائی کا دعوی کرنے والا) کا لشکر لاکھوں میں تھا ۔ اب قادیانی خود فیصلہ کریں کہ جن کی تعداد اس میں زیادہ تھی وہ سچے ہیں یا جن کی کم تھی وہ سچے ہیں؟؟
    یہ ضرور ہے کہ جھوٹ ایک دن ختم ہو جاتا ہے اور جھوٹے مدعیان نبوت اور ان کے ماننے والے ہزار ترقیوں کے باوجود آخر ختم ہوگئے۔ آج ان کا کوئی نام لیوا موجود نہیں۔ قادیانیت بھی ’’انشاء اﷲ‘‘ اسی طرح اپنے انجام کو پہنچے گی۔ ایک وقت آئے گا کہ پوری دنیا میں ان کا نام ونشان تک نہ ہوگا۔ انشاء اﷲ!
    ذرا توجہ تو کریں! ایک وہ وقت بھی تھا کہ پاکستان میں مرزاقادیانی کو کافر کہنے پر مقدمے بنتے تھے۔ آج ’’الحمدﷲ‘‘ وہ وقت ہے کہ کوئی مرزاقادیانی ملعون کو مسلمان کہے تو جیل جانا پڑتا ہے۔ اتنا بڑا انقلاب آیا کہ مرزائیوں کا نام چوڑھوں کے ساتھ لکھا گیا۔ جو پاکستان میں اپنے اقتدار کے خواب دیکھتے تھے۔ مرزائی سازشیں کرتے اور دن گنا کرتے تھے۔ آج ان کے چیف گرو مرزا مسرورکو پاکستان میں قدم رکھنے کی سکت نہیں۔ وہ آج بھی صلیب پرست عیسائیوں کے زیرسایہ ’’لندن‘‘ میں زندگی گذار رہے ہیں۔ جس طرح ان کا جھوٹا مدعی مسیحیت (مرزاقادیانی) عیسائیوں کا آلہ کار بنا تھا۔ اسی جھوٹے مدعی مسیحیت کے جھوٹے پیروکار آج انہی صلیب پرستوں کے آلۂ کار بنے ہوئے ہیں اور وہ ان کے سرپرست، فیصلہ قادیانی عدالت کرے کہ یہ مرزاقادیانی کے سچا ہونے کی علامت ہے یا جھوٹا ہونے کی؟

اس صفحے کی تشہیر