1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ

    تحفظ ناموس رسالتﷺ و ختم نبوت پر دنیا کی مایہ ناز کتب پرٹائپنگ ، سکینگ ، پیسٹنگ کا کام جاری ہے۔آپ بھی اس علمی کام میں حصہ لیں

    ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ
  3. ہمارا وٹس ایپ نمبر whatsapp no +923247448814
  4. [IMG]
  5. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

مدعی نبوت کے متعلق استخارہ کا حکم

خادمِ اعلیٰ نے 'جھوٹے مدعیانِ نبوت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ جولائی 24, 2014

  1. ‏ جولائی 24, 2014 #1
    خادمِ اعلیٰ

    خادمِ اعلیٰ رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    قادیانی : استخارہ کرنا سنت ہے ، اس لئے اپ مرزا غلام قادیانی کے بارے میں استخارہ کر لیں ؟

    جواب : استخارہ ایسے امور میں ہوتا ہے جس کا کرنا یا نہ کرنا دونوں امور مباح ہوں ، ایسے امر میں استخارہ کرنا جس کا حلال یا حرام شریعت نے واضح کر دیا ہے جائز نہیں ، جیسے ماں بیٹے پر حرام ہے ، اب کوئی بیٹا یہ استخارہ نہیں کرے گا کہ ماں مجھ پر حلال ہے یا حرام ہے . ایسے کرنے والا اسلام کی حدوں کو توڑنے والا ہوگا ، اسی طرح نماز فرض ہے ، اب نماز کی فرضیت یا عدم فرضیت پر کوئی مسلمان استخارہ نہیں کرسکتا .
    اس طرح اپ صلی اللہ علیہ وسلم اللہ تعالیٰ کے آخری نبی ہیں ، کوئی آدمی یا شخص اپ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد مدعی نبوت کے بارے میں استخارہ نہیں کر سکتا . کوئی استخارہ کرے گا تو وہ کافر ہو گا ، کیونکہ استخارہ کرنے کے یہ معنی ہیں کہ اس کے نزدیک اپ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد کوئی اور نبی بن سکتا ہے ، تبھی تو وہ استخارہ کر رہا ہے . اگر اسے یقین ہو کہ اپ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد کوئی نبی نہیں بن سکتا تو پھر استخارہ کیوں کرے ؟ استخارہ کا خیال اپنے دل میں لانا گویا اپ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد مدعی نبوت کے لئے جگہ پیدا کرنا ہے ، اور ایسا کرنا کفر ہے .

    لہذا اپ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد کسی مدعی نبوت کے لئے استخارہ کرنا کفر ہے
    • Like Like x 2
    • Bad Spelling Bad Spelling x 1
  2. ‏ نومبر 12, 2014 #2
    خادمِ اعلیٰ

    خادمِ اعلیٰ رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    احادیث میں آنے والا مسیح کا نام " عیسیٰ ابن مریم " ہے اور تمام مسلمان ان کو پہلے سے ہی مانتے ہیں ، احادیث میں " عیسیٰ ابن مریم "کو ہی نبی کہا گیا کسی ابن چراغ بی بی کے پتر کو نہیں ، کیونکہ عیسیٰ علیہ اسلام آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم سے پہلے کہ نبی ہیں تو ان کو نبی ہی کہنا تھا یا اس وقت وہ نبی کے عہدے سے معزول ہوچکے تھے نعوز باللہ ؟؟ ، تو پھر اعتراض کیسا ؟ ہاں اگر کوئی ایسی حدیث ہے جس میں ہو کہ عیسیٰ علیہ اسلام کو اللہ تعالیٰ امت محمدیہ میں بطور نبی معبوث کرے گا جیسا کہ بنی اسرائیل کی طرف معبوث کیا تو پیش کریں ؟ یا اگر ایسا نہیں کر سکتے تو کوئی ایسی حدیث ہی پیش کر دیں کہ جس میں عیسیٰ علیہ اسلام کون ؟؟ عیسیٰ ابن مریم علیھا اسلام کہیں کہ میں نبی ہوں مجھے دوبارہ نبوت دی گئی ہے اس لئے دوبارہ مجھ پر ایمان لاؤ تو پیش کریں شکریہ
    استخارہ ایسے امور میں ہوتا ہے جس کا کرنا یا نہ کرنا دونوں امور مباح ہوں ، ایسے امر میں استخارہ کرنا جس کا حلال یا حرام شریعت نے واضح کر دیا ہے جائز نہیں ، جیسے ماں بیٹے پر حرام ہے ، اب کوئی بیٹا یہ استخارہ نہیں کرے گا کہ ماں مجھ پر حلال ہے یا حرام ہے . ایسے کرنے والا اسلام کی حدوں کو توڑنے والا ہوگا ، اسی طرح نماز فرض ہے ، اب نماز کی فرضیت یا عدم فرضیت پر کوئی مسلمان استخارہ نہیں کرسکتا .
    • Like Like x 1

اس صفحے کی تشہیر