1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ

    تحفظ ناموس رسالتﷺ و ختم نبوت پر دنیا کی مایہ ناز کتب پرٹائپنگ ، سکینگ ، پیسٹنگ کا کام جاری ہے۔آپ بھی اس علمی کام میں حصہ لیں

    ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ
  3. ہمارا وٹس ایپ نمبر whatsapp no +923247448814
  4. [IMG]
  5. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

نبوت کا معیار نمبر 2:انبیاء کرام ناپاک خیالات سے پاک ہوتے ہیں

مبشر شاہ نے 'منہاج نبوت اور مرزا قادیانی' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ اکتوبر 26, 2014

  1. ‏ اکتوبر 26, 2014 #1
    مبشر شاہ

    مبشر شاہ رکن عملہ منتظم اعلی

    نبوت کا معیار نمبر 2:انبیاء کرام ناپاک خیالات سے پاک ہوتے ہیں

    ناپاک خیالات والے خواب آنا شیطانی تصرف سے ہوتا ہے اور انبیاء کرام شیطانی تصرفات سے پاک ہوتے ہیں اس لیے نہ وہ غلط قسم کے خواب دیکھتے ہیں اور نہ ہی انہیں احتلام ہوتا ہے ۔حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں :
    ما احتلم نبی قط
    (طبرانی ، الخصائص الکبریٰ جلد 1 صفحہ 120 للسیوطی، ناشر مکتبہ حقانیہ پشاور)
    اس اصول کی تائید اس قادیانی روایت سے ہوتی ہے ۔
    آپ نے فرمایا کہ چوں کہ انبیاء سوتے جاگتے پاکیزہ خیالوں کے سوا کچھ نہیں رکھتے اور ناپاک خیالوں کو دل میں آنے نہیں دیتے اس واسطے ان کو خواب میں بھی احتلام نہیں ہوتا ۔
    (سیرت المھدی جلد اول صفحہ 143 طبع جدید روایت نمبر 150)
    بلا خوف تردید ہم کہتے ہیں کہ مرزا قادیانی شیطانی تصرفات سے پاک نہ تھا اس لیے کہ ایک سفر میں اسے احتلام ہوا ۔
    (سیرت المھدی جلد اول صفحہ 757 روایت نمبر 843)

    ہم اس سے زیادہ اس دلیل کی کی تشریح کریں بس یہی کہہ سکتے ہیں :
    آفتاب آمد دلیل آفتاب
    آخری تدوین : ‏ نومبر 17, 2014
  2. ‏ دسمبر 8, 2014 #2
    مبشر شاہ

    مبشر شاہ رکن عملہ منتظم اعلی

    عند الطبراني في المعجم الكبير :
    حدثنا محمد بن عبد الله الحضرمي، وموسى بن هارون، قالا: حدثنا إبراهيم بن المنذر الحزامي، حدثنا عبد العزيز بن أبي ثابت، حدثنا إبراهيم بن إسماعيل بن أبي حبيبة، عن داود بن الحصين، عن عكرمة، عن ابن عباس، قال:ما احتلم نبي قط، إنما الاحتلام من الشيطان.
  3. ‏ دسمبر 8, 2014 #3
    مبشر شاہ

    مبشر شاہ رکن عملہ منتظم اعلی

    سئل الإمام شمس الدين الرملي ـ الشافعي ـ رحمه الله :
    " ( سُئِلَ ) عَمَّنْ قَالَ إنَّ الِاحْتِلَامَ إنْ كَانَ مِنْ الشَّيْطَانِ لَمْ يَجُزْ عَلَى الْأَنْبِيَاءِ ، وَإِنْ كَانَ بِسَبَبِ بَرْدٍ أَوْ ضَعْفٍ فَيَجُوزُ هُوَ مُصِيبٌ أَوْ لَا ؟ "
    ( فَأَجَابَ ) بِأَنَّهُ قَدْ ذَكَرَ الْأَئِمَّةُ أَنَّهُ لَا يَجُوزُ الِاحْتِلَامُ عَلَى الْأَنْبِيَاءِ عَلَيْهِمْ الصَّلَاةُ وَالسَّلَامُ وَعَلَّلُوهُ بِأَنَّهُ مِنْ الشَّيْطَانِ وَهُمْ مَعْصُومُونَ . ا هـ .
    وَحَقِيقَةُ الِاحْتِلَامِ نُزُولُ الْمَنِيِّ فِي النَّوْمِ فَأَفَادَ تَعْلِيلُهُمْ أَنَّ خُرُوجَهُ إذَا لَمْ يَكُنْ سَبَبُهُ الشَّيْطَانَ ، وَإِنَّمَا كَانَ بِسَبَبِ مَرَضٍ أَوْ نَحْوِهِ لَمْ يَمْتَنِعْ صُدُورُهُ مِنْهُمْ وَهُوَ ظَاهِرٌ وَحِينَئِذٍ فَالْقَائِلُ مُصِيبٌ " انتهى .
    "فتاوى الرملي" ـ بهامش فتاوى ابن حجر الهيتمي" (4/334) .
  4. ‏ مارچ 19, 2015 #4
  5. ‏ ستمبر 3, 2019 #5

اس صفحے کی تشہیر