1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. [IMG]
  3. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

کیا عیسیٰ علیہ اسلام خنزیروں کو قتل کریں گے ؟

خادمِ اعلیٰ نے 'حیات عیسیٰ علیہ السلام پر شبہات کے جوابات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ نومبر 30, 2014

  1. ‏ نومبر 30, 2014 #1
    خادمِ اعلیٰ

    خادمِ اعلیٰ رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    سوال : کیا عیسیٰ علیہ اسلام خنزیروں کو قتل کریں گے ؟ ۔۔۔ کیا خنزیر کو قتل کرنا ان کی شان کے خلاف نہیں ؟

    جواب 1 :
    حدیث شریف کے الفاظ " ویقتل الخنزیر " سے قرون اولیٰ سے آج تک کے تمام مسلمانوں نے صرف اور صرف ایک ہی مطلب لیا ہے ، اور وہ یہ ہے کہ حضرت عیسیٰ علیہ اسلام نعوذ باللہ خود خنزیروں کو قتل نہیں کریں گے بلکہ خود ان کی تشریف آوری کے بعد جب دنیا میں خنزیر کھانے والی اور اس کا ریوڑ پالنے والی قوم نہ رہے گی ۔ بلکہ وہ مسلمان ہو جائیں گے تو ان کے مسلمان ہو جانے پر جو لوگ خنزیر پالنے والے تھے ، وہی اس کو قتل کرنے والے ہوں گے ۔
    کیونکہ قتل خنزیر کا سبب عیسیٰ علیہ اسلام کا نزول ہوگا ۔ آپ کے حکم سے خنزیر قتل کیے جائیں گے اور آپ کے نزول کے بعد زمانہ میں یہ سب کچھ ہوگا ۔ اس لیے قتل کی نسبت آپ کی طرف کر دی گئی ۔ مثلاََ
    1 : ۔۔ جنرل محمد ضیاء الحق نے ذوالفقار علی بھٹو کو پھانسی دی حالانکہ پھانسی کا فیصلہ کرنے والا مشتاق احمد چیف جسٹس لاہور تھا اور پھانسی کا پھندا گلے میں ڈال کر بھٹو کو لٹکانے والا " تارامسیح " مشہور جلاد تھا ۔ مگر پھانسی کی نسبت جنرل ضیاء الحق کی طرف کی جاتی ہے اور کی جائے گی کیونکہ یہ سب کچھ ان کے عہد اقتدار میں ہوا حالانکہ اس نے خود پھانسی نہیں دی ۔
    2 : ۔۔ اسی طرح جنرل ایوب خاں نے 65 کی پاک بھارت جنگ میں فتح حاصل کی حالانکہ لڑنے والے فوجی تھے ایوب کے حکم سے اس کے زمانہ میں فتح ہوئی اس لیے فتح کی نسبت ایوب خاں کی طرف کی جائے گی ۔
    3 : ۔۔ یا بھٹو نے قادیانیت کو غیر مسلم اقلیت قرار دیا حالانکہ اقلیت کا ریزولیشن کرنے والی قومی اسمبلی تھی مگر بھٹو صاحب کے زمانہ میں ہوا اس لیےاس کی طرف اس کی نسبت کی جاتی ہے ۔
    4 : ۔۔ یا یہ کہا جائے کہ ہٹلر نے لاکھوں یہودیوں کا قتل کیا ، حالانکہ قتل کرنے والی اس کی فوج تھی ۔ نہ کہ اس نے اپنے ہاتھوں سے ان کا قتل کیا ۔
    اسی طرح خنزیر عیسیٰ علیہ اسلام کے زمانہ میں قتل ہوں گے مگر یہ برائی آپ کے زمانہ کے بعد ازنزول میں اختتام پذیر ہوگی ۔ اس لیے اس کا کریڈت احادیث میں اپ کو دیا گیا تو ایک برائی کو ختم کرنا اچھا فعل ہے نہ کہ قابل ملامت وباعث اعتراض ؟
    پھر کیا آپ نے کبھی سوچا کہ قتل تو خنزیر ہوں گے مگر پریشان قادیانی جماعت ہے آخر کیوں ؟ اور قتل خنزیر سے بقول قادیانیوں کے عیسیٰ علیہ اسلام کی توہین لازم آتی ہے تو پھر قادیانی جماعت مفتی صادق کی کتاب ذکر حبیب میں موجود ہے کہ
    مرزا صاحب کے ایک شاگرد نے شکایت کی کہ لوگ مجھے کتا مار پیر کہتے ہیں اس پر مرزا صاحب نے کہا کہ اس میں کیا حرج ہے ۔ حدیث شریف میں میرا نام " سور مار " لکھا ہے ۔ ( ذکر حبیب صفحہ 162 )
    اس طرح مرزا غلام قادیانی نے آپنے آپ کو خود بھی سور مارنے والا لکھا ہے ۔( خزائن جلد 17 صفحہ 317، 318 تحفہ گولڑویہ )
    ان دونوں حوالہ جات میں مرزا غلام قادیانی نے وہی بات کہی جو عیسیٰ علیہ اسلام کے لیے باعث ملامت بتاتے ہیں ۔ اگر عیسیٰ علیہ اسلام کے لیے باعث ملامت ہے تو مرزا غلام قادیانی کے لیے کیوں نہیں ؟
    " مسیح موعود ( مرزا ) اکثر ذکر فرمایا کرتے تھے کہ بقول ہمارے مخالفین جب مسیح آئے گا اور لوگ اس سے ملنے کے لیے اس کے گھر جائیں گے تو گھر والے کہیں گے کہ مسیح صاحب باہر جنگل میں سور مارنے کے لیے گئے ہوئے ہیں ۔ پھر وہ لوگ حیران ہوکر کہیں گے کہ یہ کیسا مسیح ہے کہ لوگوں کی ہدایت کے لیے آیا ہے اور باہر سوروں کا شکار کھیلتا پھرتا ہے ۔ پھر فرماتے ( مرزا) تھے کہ ایسے شخص کی آمد سے ساسینیوں اور گنڈیلوں( حرام خور ) کو خوشی ہو سکتی ہے جو اس کا کام کرتے ہیں ۔ مسلمانوں کو کیسی خوشی ہوسکتی ہے ۔ یہ الفاظ بیان کرکے آپ ( مرزا ) بہت ہنستے تھے یہاں تک کے اکثر اوقات آپ ( مرزا) کی آنکھوں میں پانی آجاتا تھا " ( سیرت المہدی جلد 3 صفحہ 292، 291 )

    اندازہ فرمائیے مرزا غلام قادیانی مارے خوشی کے جس مفروضے پر لوٹ پوٹ ہو رہے ہیں اس مضمون کا کہیں احادیث میں ذکر نہیں یہ صرف اور صرف مرزا غلام قادیانی کی خود ساختہ کہانی اور جھوٹ کا جیتا جاگتا ثبوت ہے ۔
    • Like Like x 1
    • Winner Winner x 1
  2. ‏ نومبر 30, 2014 #2
    مبشر شاہ

    مبشر شاہ رکن عملہ منتظم اعلی

    حدیث کے الفاظ یقتل الخنزیر ہے نہ کہ یقتل الخنازیر ہے اگر اس کا لفظی ترجمہ بھی کیا جائے تو یوں ہو گا کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام صرف ایک خنزیر کو قتل کریں گے نہ کہ بہت سارے خنزیروں کو جبکہ مرزائی اس حدیث سے مراد دنیا بھر کے خنزیر لیتے ہیں جو کہ دجل و فریب سے خالی نہیں ہے
    • Like Like x 1
  3. ‏ نومبر 30, 2014 #3
    بنت اسلام

    بنت اسلام رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    بہت مدلل انداز تحریر ہے -
    یہ بات میرے علم میں بھی نہیں تھی بلکہ کبھی توجہ اس طرف مبذول بھی نہیں ہوئی کہ اس کا مطلب کیا ہے" حضرت عیسٰی علیہ السلام خنزیر کو قتل کریں گے"
    بہت معلوماتی تحریر ہے-
    • Like Like x 2
  4. ‏ نومبر 30, 2014 #4
    ام ضیغم شاہ

    ام ضیغم شاہ رکن عملہ منتظم اعلی ناظم پراجیکٹ ممبر مہمان رکن ختم نبوت فورم

    ماشاءاللہ بہت اچھا انداز میں اس نازک اور حساس مسئلہ کو سلجھایا ہے کاش! کہ بھٹکے ہوۓ اس سے استفادہ کر سکیں ۔
    • Like Like x 1
    • Agree Agree x 1
  5. ‏ دسمبر 1, 2014 #5
    خادمِ اعلیٰ

    خادمِ اعلیٰ رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    • Like Like x 1
  6. ‏ مارچ 17, 2015 #6
    مبشر شاہ

    مبشر شاہ رکن عملہ منتظم اعلی

    مرزائیوں کی عقل بھی ایک تماشہ ہے :)
  7. ‏ مارچ 19, 2015 #7
    بنت اسلام

    بنت اسلام رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    ہوتا ہے شب و روز تماشہ میرے آگے-
    • Like Like x 1

اس صفحے کی تشہیر